عدالت کا اسپیکر قومی اسمبلی کو 30 دن میں اپوزیشن لیڈر کے معاملے پر فیصلہ کرنے کا حکم

لاہور (قدرت روزنامہ) لاہور ہائی کورٹ نے اسپیکر قومی اسمبلی کو 30 دن میں اپوزیشن لیڈر کے معاملے پر فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا . میڈیا رپورٹس کے مطابق عدالت کی جانب سے اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف کو اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض کے معاملے پر 30 دن میں فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست کا تحریری فیصلہ جاری کردیا .


بتایا گیا ہے کہ لاہور ہائی کورٹ نے قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف راجہ ریاض کو عہدے سے ہٹانے کی درخواست پر تحریری فیصلہ جاری کیا، جس میں کہا گیا ہے کہ اسپیکر قومی اسمبلی اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض سے متعلق درخواست پر 30 دن میں فیصلہ کریں، ایڈیشنل اٹارنی جنرل متعلقہ حکام کو عدالتی حکم سے آگاہ کریں اور رجسٹرار آفس درخواست اور فیصلے کی مصدقہ نقول اسپیکر قومی اسمبلی کو بھجوائے .
ادھر قائد حزب اختلاف قومی اسمبلی راجہ ریاض نے کہا ہے کہ اگرعمران خان قومی اسمبلی میں آکربیٹھیں تو استعفیٰ دینے کیلئے تیار ہوں،عمران خان کو کرپشن اور فارن فنڈنگ پر جواب دینا ہوگا، ان کی دونمبری دیکھو 11ارکان کے فیصلے کیخلاف عدالت چلے گئے ہیں . اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن کمیشن نے گیارہ ممبران کو ڈی نوٹی فائی کیا، دونمبری دیکھیں اب وہ فیصلے کے خلاف عدالت گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ عمران نیازی اگر استعفے کی بات کرتے ہیں تو فرح خان کی کرپشن کا جواب دو، اگرعمران خان قومی اسمبلی میں آکربیٹھیں تو میں استعفیٰ دینے کیلئے تیار ہوں، عمران خان کو کرپشن اور فارن فنڈنگ پر جواب دینا ہوگا .
دوسری جانب عمران خان کے توشہ خانہ کے تحائف کی تفصیلا ت چھپانے کے معاملے پر اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف کی جانب سے بھجوایا گیا ریفرنس الیکشن کمیشن کو موصول ہوگیا ، اے آر وائے نیوز نے ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ اسپیکر قومی اسمبلی نے ریفرنس پر فوری سماعت کی درخواست کی ہے، اسپیکرقومی اسمبلی نے عمران خان کی نا اہلی کا ریفرنس الیکشن کمیشن کو بھجوایا تھا، ریفرنس کے متن میں کہا گیا ہے کہ عمران خان نے توشہ خانہ سے لئے گئے تحائف اثاثوں میں ظاہر نہیں کئے، عمران خان نے تحائف بھیجنے کی رقوم کی تفصیلات بھی گوشواروں میں جمع نہیں کرائیں، اس لیے عمران خان کو آئین کے آرٹیکل 62 ون ایف کے تحت نا اہل قرار دیا جائے .
میڈیا رپورٹس کے مطابق اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف کی منظوری کے بعد ریفرنس دائر کیا گیا . ذرائع کا کہنا ہے کہ اسپیکر قومی اسمبلی نے 29 دن اس ریفرنس پر آئینی و قانونی ماہرین سے طویل مشاورت کی .

. .
Ad
متعلقہ خبریں