متحدہ عرب امارات کا پاسپورٹ مشرق وسطیٰ کی طاقتور ترین سفری دستاویز قرار

دبئی(قدرت روزنامہ) دنیا کے تمام ممالک کے پاسپورٹ برابر نہیں ہیں ان میں سے کچھ آپ کو دنیا کے بہت سے حصوں میں سفر کی آزادی دیں گے، دوسرے آپ کو اپنے بیگ پیک کرنے اور ہوائی اڈے کی طرف جانے سے پہلے مہینوں تک ویزا کا انتظار کرائیں گے . لندن میں قائم ایڈوائزری فرم کی طرف سے شائع ہونے والی سہ ماہی رپورٹ ہینلے پاسپورٹ انڈیکس کے مطابق دنیا کے مضبوط ترین پاسپورٹ کئی عوامل پر منحصر ہوتے ہیں جو اس بات کا تعین کرتے ہیں کہ آیا آپ کو ویزہ کے بغیر سفر کرنے کی اجازت ہے، انڈیکس میں پاسپورٹ کی درجہ بندی اس لحاظ سے کی جاتی ہے کہ ان منزلوں کے حامل افراد بغیر ویزہ کے رسائی حاصل کر سکتے ہیں، چند ممالک ایسے ہیں جو سال بہ سال اس فہرست میں سرفہرست ہیں، ان میں سے کچھ میں جرمنی، ڈنمارک، سوئٹزرلینڈ، جاپان، سویڈن اور سنگاپور شامل ہیں .


تاہم مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقہ (MENA) میں سیاسی غیر یقینی صورتحال اور جاری تنازعات کے علاوہ کئی مغربی ریاستوں کی امیگریشن مخالف پالیسیوں سمیت دیگر عوامل کی وجہ سے پاسپورٹ فہرست میں نیچے آتے ہیں، یہاں مڈل ایسٹ آئی مشرق وسطیٰ کے طاقتور ترین پاسپورٹوں پر ایک نظر ڈالتی ہے .
1> متحدہ عرب امارات:
اپنے شاہانہ شاپنگ مالز اور اثر و رسوخ کی ثقافت کا عالمی دارالحکومت ہونے کی وجہ سے جانا جاتا ہے، متحدہ عرب امارات کے پاس مشرق وسطیٰ کا اعلیٰ درجہ کا پاسپورٹ ہے، جو عالمی سطح پر 15ویں نمبر پر ہے، خلیجی ملک اپنی وسیع سرمایہ کاری کی حکمت عملی کے لیے جانا جاتا ہے جس میں سرکاری مالیاتی کمپنیاں دنیا بھر میں رئیل اسٹیٹ کمپنیوں، اسپورٹس کلبوں اور بینکوں میں حصص رکھتی ہیں، سرمایہ کاری کے اس امکان نے ملک کو ہینلے پاسپورٹ انڈیکس میں سب سے بڑے کوہ پیماؤں میں سے ایک بنا دیا ہے، جو کہ صرف پچھلی دہائی میں 64 ویں مقام سے اوپر جا رہا ہے، گزشتہ برسوں کے دوران متحدہ عرب امارات نے اپنی سیاحت کی صنعت کو ترقی دینے اور کاروبار اور تفریح ​​کے لیے ایک عالمی ہاٹ سپاٹ کے طور پر بھی خصوصی کوششیں کی ہیں, آج اماراتی پاسپورٹ رکھنے والے 175 مقامات تک بغیر کسی پریشانی کے رسائی حاصل کر سکتے ہیں .
2> اسرائیل:
اسرائیلی پاسپورٹ MENA خطے میں دوسرا طاقتور پاسپورٹ ہے، نا صرف پاسپورٹ رکھنے والے دیگر قومیتوں کو رکھنے کے قابل ہیں بلکہ اسرائیلی پاسپورٹ انہیں 159 مقامات پر بغیر کسی پابندی کے داخل ہونے کی اجازت دیتا ہے، درجہ بندی پر ریاست کی پوزیشن حیران کن ہوسکتی ہے کیوں کہ کتنے ممالک خاص طور پر عرب اور مسلم دنیا میں اس ملک کو تسلیم نہیں کرتے، اسرائیلی شہریوں پر پابندیاں عائد ہیں، انہیں شام، عراق، ایران، یمن، پاکستان، لیبیا اور لبنان میں داخل ہونے کے لیے خصوصی سرٹیفکیٹ حاصل کرنا ضروری ہے .
3> ترکی:
وبائی امراض کے دوران مشرق وسطی کے بہت سے دوسرے ممالک کی طرح ترکی کے پاسپورٹ کی درجہ بندی (عالمی سطح پر 54 ویں) سفری پابندیوں سے بہت زیادہ متاثر ہوئی , ممالک نے وبائی مرض سے نمٹنے کے بارے میں خدشات پر ترک شہریوں کے لئے اپنے دروازے بند کردیئے، عالمی انڈیکس پر ترکی کی پوزیشن کو متاثر کرنے والا ایک اور عنصر اس کی معیشت ہے جو کہ افراط زر کی دنیا کی بلند ترین شرحوں میں سے ایک کا شکار ہے، جس کی وجہ سے بہت سے ترکوں کو ملک سے باہر مواقع تلاش کرنے پر مجبور کیا ہے، جولائی 2022 میں ملک میں افراط زر کی شرح 70 فیصد تک پہنچ گئی، جس سے اشیائے ضروریہ کی قیمتیں عام لوگوں کی پہنچ سے دور ہو گئیں، اس کے باوجود، ترک پاسپورٹ رکھنے والے اب بھی 110 ممالک میں بغیر ویزا کے داخل ہو سکتے ہیں .
4> قطر:
چھوٹے لیکن اقتصادی طور پر طاقتور ملک قطر پاسپورٹ کی مضبوطی کے حوالے سے اتار چڑھاؤ کا شکار رہا ہے، اس وقت دنیا کے 57 ویں طاقتور پاسپورٹ کے طور پر درجہ بندی کرتے ہوئے حالیہ برسوں میں قطری پاسپورٹ کی قدر میں خاص طور پر پڑوسی ریاستوں کے ساتھ اس کے تعلقات کی وجہ سے اتار چڑھاؤ آیا ہے، 2017 میں قطر کو سعودی عرب، مصر، بحرین اور متحدہ عرب امارات سمیت پڑوسی ریاستوں کے اتحاد کی طرف سے مسلط کردہ ناکہ بندی کا سامنا کرنا پڑا، پابندیوں کے ایک حصے کے طور پر قطری شہریوں پر ان ریاستوں کے سفر پر پابندی عائد کی گئی تھی یا ان تک پہنچنے کی کوشش میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا، وبائی امراض کے حوالے سے پابندیوں نے قطر کی درجہ بندی کو بھی متاثر کیا، ملک 2020 میں 54 ویں نمبر پر تھا لیکن 2021 میں گر کر 60 ویں نمبر پر آ گیا، اس کے باوجود قطر مسلسل انڈیکس اوپر چڑھ رہا ہے، قطری شہریوں کو 2006 میں 57 ممالک تک ویزہ فری رسائی حاصل تھی لیکن 2022 میں یہ تعداد دگنی ہو کر 99 ہو گئی .
5> کویت:
اپنے خلیجی پڑوسی قطر کے پیچھے قریب سے درجہ بندی کرتے ہوئے کویت کی 59ویں پوزیشن اس کے پاسپورٹ ہولڈرز کو پری ڈیپارچر ویزا کی ضرورت کے بغیر 96 ممالک کا سفر کرنے کی اجازت دیتی ہے، مستحکم اقتصادی، سماجی اور سیاسی ماحول کی وجہ سے کویت کا پاسپورٹ آنے والے سالوں میں مزید مضبوط ہونے کا امکان ہے، ہینلے پاسپورٹ کے عالمی جائزہ کے مطابق زیادہ استحکام والے ممالک کے انڈیکس میں اوپر جانے کا امکان ہے، خاص طور پر جب خطے کے دیگر ممالک تنازعات میں پھنسے ہوئے ہیں، خلیجی ریاست کی معیشت اپنی تیل کی دولت پر انحصار کرتی ہے اور اس کے نتیجے میں اپنے پڑوسیوں کی طرح ملک میں شہریوں کے لیے اعلیٰ معیار زندگی ہے .

. .
Ad
متعلقہ خبریں