بابر اعظم نے بھی ہدف کے تعاقب کے فن میں مہارت حاصل کر لی ہے: شعیب اختر

لاہور(قدرت روزنامہ) پاکستان نے 200 کے ٹوٹل کا تعاقب کرتے ہوئے بابر اعظم اور محمد رضوان کے ناقابل شکست 203 رنز کی شراکت داری کی بدولت دوسرے ٹی ٹونٹی میں انگلینڈ کے خلاف 10 وکٹوں سے جیت حاصل کی . پاکستانی کپتان نے اپنی دوسری ٹی ٹونٹی سنچری میں 66 گیندوں پر ناقابل شکست 110 رنز بنائے جب کہ محمد رضوان نے 88 رنز بنائے .

پاکستان کے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے بابر اعظم کی تعریف کی اور بڑے ٹوٹل کا تعاقب کرنے کے ان کے انداز کا موازنہ ہندوستان کے سابق کپتان ویرات کوہلی سے کیا .
شعیب اختر نے اپنے یوٹیوب چینل پر کہا کہ ویرات کوہلی ہدف کا تعاقب کرنے کے ماسٹر تھے، بابر اعظم نے بھی اب اس فن میں مہارت حاصل کی ہے . بابر اور رضوان کھیل کے مختصر ترین فارمیٹ میں تعاقب کرتے ہوئے 200+ اسکور کرنے والی پہلی جوڑی بن گئے .
شعیب اختر نے کہا کہ پاکستان کو یہی ضرورت ہے ، رن اور سٹرائیک ریٹ" . بابر اعظم جمعرات کے میچ میں اپنے پچھلے سات ٹی 20 میں صرف 98 رنز بنا کر آئے جس میں متحدہ عرب امارات میں ایشیا کپ کے چھ میچوں میں 68 رنز اور منگل کو سیریز کے ابتدائی کھیل میں 30 رنز کی اننگز شامل تھی .

شعیب اختر نے مزید کہا کہ ’دونوں اوپنرز خصوصاً بابر اعظم نے ایک بار پھر دکھایا کہ دنیا کا نمبر ایک کھلاڑی کیوں ہے، جب وہ تیزی سے سکور کرتا ہے تو وہ رضوان کی زندگی کو آسان بنا دیتا ہے . وہ ایک دوسرے کی تکمیل کرتے ہیں‘ . شعیب اختر نے اس بات پر زور دیا کہ بابر اور رضوان کی جوڑی کو آئندہ میچز میں ایک ہی ٹیمپلیٹ کی پیروی کرنی چاہیے تاکہ مڈل آرڈر کو سانس لینے کی کچھ جگہ مل سکے . ان کا کہنا تھا کہ ’سٹرائیک ریٹ بہت اہم ہے . ہاں، آپ ہر میچ میں اس سٹرائیک ریٹ کو برقرار نہیں رکھ سکتے لیکن اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ مڈل آرڈر میں کچھ جگہ چھوڑ دیں تاکہ انہیں 13 سے اوپر جانے والے رن ریٹ کا پیچھا نہ کرنا پڑے .

. .
Ad
متعلقہ خبریں