امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتار نہیں کرسکتی، عمران خان


لاہور (قدرت روزنامہ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتار نہیں کرسکتی . دنیا نیوز کے مطابق چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے احتجاج کے حوالے سے پارٹی کے سینئر رہنماؤں سے مشاورت مکمل کرلی، اس دوران عمران خان کی ممکنہ گرفتاری کے خدشے کے حوالے سے بھی مشاورت ہوئی، عمران خان نے اس حوالے سے تحریک انصاف کی مرکزی قیادت کو ہدایات جاری کردیں جس کے تحت پی ٹی آئی کارکن مختلف شفٹوں میں زمان پارک لاہور میں عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر احتجاج کریں گے .


پارٹی کے سینئر رہنماؤں سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ 22 کروڑ عوام تحریک انصاف کے ساتھ کھڑے ہیں، اس لیے امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتار نہیں کرسکتی، ان کے اپنے کیسز عدالتوں میں ہیں .
چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ فواد چوہدری کے خلاف کیس انتقامی کارروائی ہے، کیوں کہ فواد چوہدری تحریک انصاف کے ہراول دستے کا حصہ ہیں .

ادھر لاہور کی مقامی عدالت نے تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کا راہداری ریمارنڈ منظور کر لیا ہے، پاکستان تحریک انصاف کے رہنماء فواد چوہدری کے راہداری ریمانڈ سے متعلق تحریری حکم جاری کردیا گیا، لاہور کی کینٹ کچہری کی عدالت سے جاری تحریری حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ فواد چوہدری کا طبی معائنہ کروا کر اسلام آباد لے جایا جائے، فواد چوہدری کا سروسز ہسپتال سے میڈیکل کرایا جائے، اس کے بعد اسلام آباد کا سفر 3 سے 4 گھنٹے پر محیط ہے، اس لیے فواد چوہدری کو آج ہی اسلام آباد کی متعلقہ عدالت میں پیش کیا جائے .
بتایا گیا ہے کہ لاہور کینٹ کچہری میں فواد چوہدری کے راہداری ریمانڈ کی درخواست پر سماعت ہوئی، پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کو عدالت میں پیش کردیا گیا، فواد چوہدری کے وکلا بھی کمرہ عدالت میں موجود تھے، تفتیشی افسر نے مقدمے کی کاپی اور فواد چوہدری کی گرفتار کی رپورٹ عدالت میں جمع کروا دی . اس موقع پر فواد چوہدری نے فاضل جج سے استدعا کی کہ مجھے ایف آئی آر کی کاپی دی جائے اور میرا میڈیکل کرانے کا حکم دیا جائے، جس پر عدالتی حکم پر فواد چوہدری کو ایف آئی آر کی کاپی دے دی گئی اور عدالت نے گرفتار پی ٹی آئی رہنماء کا میڈیکل کروانے کی استدعا بھی منظور کرلی .
بعد ازاں عدالت نے فواد چوہدری کا راہداری ریمانڈ بھی مںظور کر لیا اور عدالت نے فواد چوہدری کو اسلام آباد لے جانے کی اجازت دے دی، سماعت مکمل ہونے پر پولیس رہنما تحریک انصاف کو کینٹ کچہری سے لے کر روانہ ہو گئی . عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو میں تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری نے کہا کہ مجھے بغاوت کے الزام میں گرفتار کیا گیا، میں تو کہتا ہوں کہ 22 کروڑ عوام پر مقدمات بنا دو، میری پیشی پر اتنی پولیس لگا دی شاید کوئی جیمز بونڈ کو پیش کرنا ہے، مجھے گرفتار کرنے والوں کو شرمندگی ہوگی، جس جرم میں گرفتار کیا گیا اس کا علم نہیں، پولیس بتائے مجھے کس جرم میں گرفتار کیا گیا، پولیس مجھے ایف آئی آر تو پڑھا دے .

. .

متعلقہ خبریں