عمران خان نے معیشت ٹھیک کرنے کا فارمولا بتا دیا

اسلام آباد (قدرت روزنامہ)پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ زرداری اور شریف خاندان اپنی دولت کا پچاس فیصد حصہ لے آئیں تو پاکستان بحران سے نکل جائیگا،حکومت اور جمہوریت اخلاقی قوت سے چلتی ہے ڈنڈوں سے نہیں، پی ٹی آئی کے کارکنان اور مظاہروں میں شریک لوگوں پر تشدد کرنے والوں کے چہرے ہمیں یاد ہیں جن سے حساب لیں گے،

بیورو کریسی اور پولیس شریف خاندان کی غلامی سے باہر آجائے، حمزہ کی حکومت جلد ختم ہوجائے گی ، یہ سوشل میڈیا کا دور ہے ساری باتیں اور چیزیں انٹرنیٹ پر موجود ہوں گی،نئی حکومت نے پیٹرول، بجلی، گیس ہر چیز کی قیمتیں بڑھا دیں، گزشتہ دو ماہ سے مہنگائی بڑھ رہی ہے ،جولائی میں مہنگائی مزید اور بڑھ جائے گی، دو جولائی کو میں اسلام آباد پریڈ گراؤنڈ میں احتجاجی جلسے سے خطاب کروں گا . منگل کو عمران خان کی زیرصدارت اجلاس ہوا، جس میں ملک کی سیاسی صورتحال اور عوام پر مہنگائی کے اثرات کا جائزہ لیا گیا .

اجلاس میں 2 جولائی کو اسلام آبادمیں جلسے کے انعقاد سے متعلق امور پر بھی گفتگو کی گئی اور حکومتی اتحادیوں کی قومی اسمبلی میں تقاریر کے متن کا بھی جائزہ لیا گیا . اس موقع پر پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ پاکستان کو مزید دلدل میں گرنے سے بچانے کے لئے واحد راستہ صاف شفاف انتخابات ہیں . عمران خان نے پارٹی ذمہ داران کو مہنگائی پر عوام کی بھرپور ترجمانی کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ چوروں نے خود کو ریلیف دینے کے لیے عوام کو بدترین مہنگائی کی اذیت ناک تکلیف میں مبتلا کررکھا ہے . انہوں نے کہا کہ نااہل، بددیانت اور بدنام گروہ نے اپنی چوری بچانے کے لئے بغیر تیاری اقتدار پر قبضے کی سازش کی، 2018 میں تحریک انصاف کو اقتدار ملا تو معیشت دیوالیہ پن کے کنارے کھڑی تھی، آئی ایم ایف شرائط، کمزور معیشت اور کورونا کے باوجود عالمی مہنگائی کا بوجھ عوام پر منتقل نہیں کیا . انہوںنے کہاکہ امپورٹڈ کٹھ پتلیوں نے 9 ہفتوں میں مہنگائی کی صورت میں عوام سے اپنی غلامی کی قیمت وصول کی، ان تجربہ کار چوروں کے زیر سایہ حال کی طرح معیشت کا مستقبل بھی تاریک ہے، متنبہ کیا تھا کہ نہایت محنت سے کھڑی کی گئی معیشت سیاسی عدمِ استحکام کا بوجھ برداشت نہیں کر پائے گی . بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے

سابق وزیراعظم نے کہا کہ موجودہ حکومت غیرملکی سازش کے تحت آئی ہے، یہ تومہنگائی کم کرنے آئے تھے، دوماہ ہو گئے مہنگائی مسلسل بڑھ رہی ہے، دوماہ میں سٹاک مارکیٹ بھی نیچے گرگئی ہے، دوماہ سے روپیہ کی قدرمسلسل کم کورہی ہے . عمران خان نے کہاکہ ہماری حکومت میں ملک صحیح سمت میں جارہا تھا، آئی ایم ایف نے بھی ہماری حکومت کی کارکردگی کوسراہا،

کونسی قیامت آگئی دوماہ میں مہنگائی آسمان پرپہنچ گئی . انہوں نے کہا کہ قوم باہر نکل کر مظاہرے کر رہی ہے، جمہوریت میں ڈنڈے استعمال کرنے کے بجائے لوگوں کے مسائل کو حل کریں، ہماری حکومت میں لوڈشیڈنگ نہیں تھی، کیا ہوا دوماہ میں اتنی لوڈشیڈنگ کیوں بڑھ گئی؟، کیا آپ لوگوں کی تیاری نہیں تھی، پاورپلانٹس میں بجلی بھی نہیں بن رہی اور قوم کیپسٹی پیمنٹ ادا کررہی ہے،

مسلم لیگ(ن)نے امپورٹڈ کوئلے پرپلانٹ لگائے، ساہیوال پلانٹ جس نے بنایا اس کو جیل میں ڈالنا چاہیے، ساہیوال پلانٹ کی وجہ سے ماحولیات پر بھی اثر پڑ رہا ہے . عمران خان نے کہاکہ سازش کرکے اقتدارمیں آگئے ہیں تو کہتے ہیں سارا کچھ عمران خان نے کیا، اگر ہم نے سارا کچھ کیا تو ہمیں اقتدارمیں رہنے دیتے،

ہماری حکومت بھی آئی ایم ایف پروگرام میں تھی، ہماری حکومت نے کورونا کے باوجود عوام کوریلیف دیا، کورونا کے دوران دنیا میں مہنگائی بڑھی، ہم نے اپنا پیٹ کاٹ کر ڈیزل، پٹرول، بجلی کی قیمتیں نہیں بڑھائی تھی، کونسی قیامت آئی ہے تمام چیزوں کی قیمتیں آسمان پرچلی گئیں،

ابھی تولوگوں کوبجلی کے بل آنے ہیں . سابق وزیر اعظم نے کہاکہ یہ سارا وقت اپنی چوری بچانے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں، یہ عوام پرشیلنگ کررہے ہیں، چوری بچانے کے بجائے عوام کوریلیف دیں . سابق وزیر اعظم نے کہاکہ پچیس مئی کو چادر اور چار دیواری کے تقدس کو پامال کیا گیا، آمریت میں بھی ایسا ظلم نہیں دیکھا تھا . عمران خان نے کہاکہ ان سے حکومت سنبھالی نہیں جارہی

، یہ بیرون ملک ہاتھ پھیلا رہے ہیں کوئی ان کی مدد نہیں کر رہا، فری میں کوئی مدد نہیں کرتا، یہ سمجھتے ہیں ظلم اور تشدد کر کے لوگوں کو کنٹرول کر لیں گے ایسا نہیں ہوگا، جولائی میں لوڈ شیڈنگ اور مہنگائی بڑھے گی . عمران خان نے کہا کہ ہفتے کی شام کو پریڈ گراؤنڈ میں تاریخی احتجاج کریں گے، ہفتے کو بڑے شہروں میں بھی پرامن احتجاج کریں گے، ہم زندہ قوم بن کر سب احتجاج میں شرکت کریں گے، جمہوریت میں پرامن احتجاج کرنا سب کا حق ہے، ڈنڈے، شیلنگ سے کبھی بھی جمہوریت نہیں چلتی،

جمہوریت اخلاقی قوت سے چلتی ہے . انہوںنے کہاکہ سازش کر کے انہوں نے معاشی بحران پیدا کیا، ملک ٹھیک چل رہا تھا انہوں نے پہلے حکومت گرا کر بحران اوراس کے بعد معاشی بحران آیا، شوکت ترین کو کہا تھا نیوٹرل کو بتاؤ اگر سیاسی بحران آیا تو ملک قیمت ادا کرے گا .

انہوںنے کہاکہ مجھے پتا تھا ان سے ملک نہیں سنبھالا جائے گا، شہبازشریف کی ساری ڈویلپمنٹ تواشتہارات میں ہوتی ہے . انہوں نے کہا کہ ان میں ملک کو بحران سے نکالنے کی صلاحیت نہیں، انہوں نے1100ارب معاف کرالیا ہے، اگر عوام کو 500 ارب کی بجلی پر سبسڈی دیدیں تو اس بحران کو روک سکتے ہیں، ہم پْرامن احتجاج کر کے بتائیں گے زندہ قوم ہیں، احسن اقبال نے ایک ڈرامہ شروع کیا ہے .

عمران خان نے کہاکہ معیشت کوٹھیک کرنے کا ایک ہی طریقہ زرداری، شریف خاندان کا آدھا پیسہ واپس لے آئیں تو ملک بحران سے نکل سکتا ہے، ملک میں صاف اور شفاف الیکشن کے علاوہ کوئی دوسرا راستہ نہیں . عمران خان نے کہا کہ پنجاب میں حمزہ شہبازکی حکومت کی کوئی آئینی حیثیت نہیں ہے، شکرہے عدالت نے مخصوص نشستوں کے حوالے سے فیصلہ دیا، اتنا جانبدارالیکشن کمیشن نہیں دیکھا، لگ رہا ہے

اب پنجاب میں حمزہ شہبازکی حکومت نہیں رہے گی . انہوںنے کہاکہ پنجاب پولیس اور بیورو کریسی نے شریف مافیا کے کہنے پر 25مئی کوعوام پرظلم کیا، پنجاب میں الیکشن میں دھاندلی کی تیاری ہو رہی ہے، انہوں نے تو رہنا نہیں افسران کوئی غیر قانونی کام نہ کریں، ہمیں تمام پولیس افسران کی شکلوں کا پتا ہیے . انہوںنے کہاکہ ملک اس سازش اور ان لوگوں کی وجہ سے بہت تیزی سے نیچے کی طرف جارہا ہے .

. .
Ad
متعلقہ خبریں