سرداریارمحمد رند نے بلوچستان حکومت کی کھل کرمخالفت کردی

کوئٹہ(قدرت روزنامہ)سرداریارمحمد رند کا کہنا ہے کہ اہم اتحادی ہونے کے باوجود بلوچستان کابینہ کے سلسلے میں ہم سے کوئی مشاورت نہیں کی گئی . تحریک انصاف کے پارلیمانی لیڈر وزیراعظم کے مشیرسردار یار محمد رند بزنجو نے بلوچستان حکومت کی کھل کر مخالفت کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ سابق وزیراعلٰی بلوچستان جام کمال خان نے3 برسوں کے دوران اپنے دوستوں سے اختلافات پیدا کیے، موجودہ وزیراعلیٰ نے تو پہلے روز ہی سے ان اختلافات کا آغاز کردیا ہے .

وزیراعظم کے مشیرکا کہنا ہے کہ ہم صوبے میں بلوچستان عوامی پارٹی کے اتحادی ہیں اس کے باوجود ہم سے کوئی مشاورت نہیں کی گئی . میں آج بھی اپنے دوستوں کے ساتھ ہوں . اس لیےمیں نے خود کابینہ میں شامل ہونے سے انکار کیا ہے . واضح رہے کہ بلوچستان کی نئی کابینہ کی تشکیل کے بعد مخلوط حکومت میں شامل اتحادی پی ٹی آئی اور خواتین ایم پی ایز نے کابینہ کو پسند نا پسند کی کابینہ قراردیا تھا . خاتون رکن اسمبلی بشری رند نے بلوچستان کابینہ کےحوالے سے طنزیہ ٹویٹ میں وزیراعلیٰ قدوس بزنجو کو مبارکباد میں لکھا کہ خواتین کو بااختیار بنانے کے ان کے دعوے صرف باتوں تک محدود ہیں . خاتون رکن اسمبلی بشری رند اورماہ جبین شیران نے بلوچستان کابینہ کےحوالے سے طنزیہ ٹویٹ میں وزیراعلیٰ قدوس بزنجو کو مبارکباد میں کہا تھا کہ خواتین کو بااختیار بنانے کے ان کے دعوے صرف باتوں تک محدود ہیں . 14 وزرا اور پانچ مشیروں میں کوئی ایک خاتون بھی شامل نہیں . . .

Ad
متعلقہ خبریں