زلفی بخاری نے کمشنر راولپنڈی پر 1 ارب روپے کے ہتک عزت کا دعویٰ کردیا

اسلام آباد(قدرت روزنامہ) وزیراعظم عمران خان کے سابق معاون خصوصی زلفی بخاری نے راولپنڈی رنگ روڈ انکوائری کیس میں کمشنر راولپنڈی سید گلزار حسین شاہ پر ایک ارب روپے کے ہتک عزت کا دعویٰ کردیا . تفصیلات کے مطابق ہتک عزت کے دعویٰ میں راولپنڈی کی مقامی عدالت نے کمشنر راولپنڈی گلزار حسین شاہ کو طلب کر لیا ، طلبی کا نوٹس ایڈیشنل سیشن جج خرم سلیم کی عدالت کی جانب سے جاری کیا گیا .

زلفی بخاری کی درخواست پر راولپنڈی کی مقامی عدالت نے کمشنر راولپنڈی گلزار حسین شاہ کو طلب کرتے ہوئے انہیں حاضری کا نوٹس بھجوادیا . میڈیا رپورٹس کے مطابق کمشنر راولپنڈی پیر کو طلب کیے جانے کے باوجود عدالت میں حاضر نہیں ہوئے تھے . یاد رہے کہ راولپنڈی رنگ روڈ انکوائری رپورٹ میں کمشنر راولپنڈی نے زلفی بخاری پر کرپشن کا الزام عائد تھا . رپورٹ میں عائد الزامات غلط ثابت ہونے پر زلفی بخاری نے ایک ارب روپے ہرجانے کا نوٹس بھیجا تھا . نوٹس میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ گلزار حسین شاہ بدنام زمانہ کرپٹ بیوروکریٹ ہیں جنہیں ڈسکہ ‏الیکشن میں کرپشن اور دھاندلی میں ملوث ہونے کی وجہ سے ہٹا دیا گیا تھا . ‏ زلفی بخاری نے مؤقف اپنایا کہ گلزارحسسین شاہ کو خصوصی طور پر سابق کمشنر کی جگہ ‏تعینات کیا گیا تھا . اس کے باوجود کہ انکوائری کمیٹی کے بقیہ دو ممبران نے تحقیقاتی رپورٹ پر دستخط کرنے سے ‏انکار کردیا تھا لیکن گلزار حسسین شاہ نے پھر بھی رپورٹ میں بغیر ثبوت زلفی بخاری پر اختیارات ‏کے ناجائز استمعال کا الزام عائد کیا . انہوں نے کہا تھا کہ اس کیس میں گلزار حسسین شاہ کو عدالت میں الزامات کو ثابت کرنا پڑے گا یا پھر الزام عائد ‏کرنے کی وجہ بتانی پڑے گی، ثبوت اور شواہد کی عدم دستیابی کی صورت میں کمشنر راولپنڈی ‏کو 1 ارب روپے کا ہرجانہ ادا کرنا پڑے گا . . .

Ad
متعلقہ خبریں