گوادار میں خودکش حملے پر چینی سفارتخانے کا ردِعمل آگیا

اسلام آباد (قدرت روزنامہ) گوادار میں خودکش حملے پر چینی سفارتخانے کا ردِعمل بھی آگیا ہے . چینی سفارتخانے کا کہنا ہے کہ گوادر منصوبے پر کام کرنے والے عملے کے قافلے پر حملہ کیا گیا .

خودکش حملے کی پرزور مذمت کرتے ہیں . حکومت پاکستان تحقیقات کرکے مجرمان کو سزا دے . چینی سفارتخانے نے مزید کہا کہ جاں بحق بچوں کے ورثا سے اظہارِ افسوس کرتے ہیں . حملے میں ایک چینی شہری زخمی، 2 مقامی بچے جاں بحق، متعدد زخمی ہوئے . واضح رہے کہ گوادر کے علاقے بلوچ وارڈ میں دھماکے کے نتیجے میں 2 بچوں سمیت 3 افراد جاں بحق ہوگئے . میڈیا رپورٹ کے مطابق گوادر کے علاقے بلوچ وارڈ میں دھماکے کے نتیجے میں 2 بچوں سمیت 3 افراد جاں بحق اور 2 زخمی ہوگئے . ذرائع کے مطابق دھماکا ایکسپریس وے کی تعمیر پر مامور عملے کی گاڑی کے قریب ہوا . ریسکیو ذرائع کا کہنا ہے کہ دھماکے میں زخمی ہونے والے افراد کو طبی امداد کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا . قانون نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے جس کے بعد شواہد اکٹھے کیے گئے . بعدازاں وزارت داخلہ کی جانب سے جمعہ کی شام کو گوادر میں ہوئے دھماکے کے حوالے سے تفصیلات جاری کی گئی ہیں . بتایا گیا کہ بلوچستان کے ساحلی شہر گوادر کی ایسٹ بےایکسپریس وے پر چینی قافلے پر خودکش حملہ کیا گیا . ‏قافلہ 4گاڑیوں پرمشتمل تھا جس کے ساتھ آرمی اور پولیس کی گاڑیاں بھی تھیں . حملہ آور کو سادہ کپڑوں میں ملبوس اہلکاروں ‏نے روکا تو حملہ آور نے قافلے سے 15 سے 20 میٹر دور ہی خود کو دھماکے سے اڑا لیا . حملے میں ایک چینی باشندہ زخمی ہوا جب کہ دھماکے کے قریب ‏کھیلنے والے دو بچے جاں بحق اور 2 زخمی ہوئے . حملے کے بعد وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ چینی اور پاکستان حکام دونوں ملکوں کی دوستی کولاحق ‏خطرات کا ادراک ہے پاکستان نےچائنیز کی سیکیورٹی کے حوالے سے خاطر خواہ اقدامات اٹھا رکھے ‏ہیں، اس مشکل دور میں دونوں ممالک ایک دوسرے کے ساتھ کھڑے ہیں . یہاں واضح رہے کہ اس سے قبل دہشت گردوں کی جانب سے داسو میں چینی اور پاکستانی شہریوں کی بس پر حملہ کیا گیا تھا . . .

متعلقہ خبریں